چینی صدر شی چن پنگ

دہشت گردی کےخلاف جنگ میں پاکستان نے بے پناہ قربانیاں دیں ،دنیا اعتراف کرے،چینی صدر

اسلام آباد (نیوز ڈیسک)چینی صدر شی چن پنگ نے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان نے بے پناہ قربانیاں دی ہیں ،دنیا پاکستان کی قربانیوں کا اعتراف کرے،پاکستان نے بڑے بڑے خطرات کے باوجود اپنی خود مختاری اور سالمیت کا دفاع کیا ہے،پاکستان کے پاس ایشین ٹائیگر بننے کا موقع ہے ،وزیر اعظم نواز شریف پاکستان کو ایشین ٹائیگر بنانا چاہتے ہیں،پاکستان ایک دن ضرور ایشین ٹائیگر بنے گا، پاکستانی قوم متحد ہوکر قومی ترقی کے اہداف حاصل کرسکتے ہیں، چین کے لوگ پاکستانی قوم کے ساتھ ہیں ،چین کی دوستی پہاڑوں سے بلند اور شہد سے میٹھی ہے ،پاکستان ہمارا گھر،اچھا بھائی اور ایک اچھاپڑوسی ہے،چین پاکستان کی مدد کو اپنی مدد سمجھتا ہے، پاکستان کو بہت سے چیلنجز کا سامنا ہے جس سے نمٹنے کیلئے پاکستان کامیاب ہو رہا ہے ،پاکستان کی خود مختاری اور سالمیت کی مکمل حمایت جاری رکھیں گے،چین کے ساتھ سفارتی روابط رکھنے والا پاکستان پہلا ملک ہے،اقتصادی راہداری منصوبہ پاکستان اور چین کا مشترکہ منصوبہ ہے جس کی کامیابی سے پورے خطے میں خوشحالی آئے گی،افغانستان کے معاملے پر پاکستان کے موقف کی بھر پور حمایت کرتے ہیں اور چین شانہ بشانہ کھڑا رہے گا۔منگل کے روز پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چین کے صدر شی چن پنگ نے کہا کہ پارلیمنٹ سے خطاب کی دعوت پر پاکستان کا مشکورہوں،مجھے پارلیمنٹ میں آ کر بہت خوشی ہوئی ہے ،یہ میرے لئے اعزاز کی بات ہے ،پاکستان اور عوام کی شاندار مہمان نوازی کا شکریہ ادا کرتا ہوں،مہمان نواز ی کو دیکھ میرے ساتھ آنے والا وفد بھی متاثر ہوا ہے ۔چین پاکستان کو اپنا ائرن برادر سمجھتا ہے،دونوں ملکوں کی دوستی آنسلوں کے لئے ہے، چینی عوام کا پاکستانی عوام کے لئے نیک خواہشات کا تحفہ لایا ہوں،مجھے وہ وقت بھی یاد ہے جب چین دنیا میں تنہا تھا اور پاکستان واحد ملک ہے جس نے چین کو سب سے پہلے تسلیم کیا تھا،پاکستان نے ہر مشکل وقت میں چین کے لئے فضائی راستہ کھولا ہے،چین میں قدرتی آفات آئیں تو پاکستان نے بھر پور ساتھ دیا ہے،یمن سے چینی باشندوں کے انخلاءپر پاکستان کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ہزاروں پاکستانی چینی انجینئرز کے شانہ بشانہ کام کررہے ہیں،چینی صدر نے اپنے خطاب کے علامہ اقبال کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ علامہ اقبال نے1930 ءمیں کہا کہ تھا کہ چین ایک طاقت بن کر ابھرے گا حالانکہ اس وقت چین نے آزادی حاصل بھی نہیں کی تھی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کی دوستی پہاڑوں سے بلند اور شہد سے میٹھی ہے ،پاکستان ہمارا گھر،اچھا بھائی اور ایک اچھاپڑوسی ہے،پاکستانی آمد میرے لئے دو بھائیوں میں ملاقات جیسی اہمیت رکھتی ہے،چینی عوام پاکستان کو اچھا دوست ،اچھابھائی اور شراکت دار سمجھتے ہیں،پاکستانی عوام بہت بہادر اور باصلاحیت ہیں،شاہراہ قراقرم دو تہذیبوں کے درمیان بندھن ہے،پاک چین دوستی حقیقی معنوں میں سدابہار ہے،چین اور پاکستان کی ثقافتی روایات ایک جیسی ہیں۔چینی صدر نے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں لازوال قربانیا ں دی ہیں،پاکستانی عوام نے ہزاروں جانیں اس جنگ میں گنوا دی ہیں ،پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فرنٹ لائن اسٹیٹ کا کردار ادا کیا ہے،دنیا کو پاکستانی کی قربانیوں کا اعتراف کرنا چاہیے ،پاکستان نے بڑے بڑے خطرات کے باوجود اپنی خود مختاری اور سالمیت کا دفاع کیا ہے،پاکستان کے پاس ایشین ٹائیگر بننے کا موقع ہے ،پاکستان ایک دن ضرور ایشین ٹائیگر بن جائے گا ،دنیا میں امن کیلئے پاکستان کی کوششوں کو سراہتے ہیں،پاکستان قدیم تہذیب اور تمدن کا حامل ہے،انہوں نے کہا کہ چین نے پاکستان میں تباہ کن سیلاب اور تباہ کن زلزلہ کے وقت اپنے پاکستانی بھائیوں کی بھر پور مدد کی تھی۔انہوں نے کہا کہ افغانستان میں پاکستان کا کردار بہت اہم ہے، افغان معاملے پر پاکستانی موقف کی حمایت کرتے ہیں اور پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑے رہے گے، چین پاکستان کی افغان پالیسی کی حمایت کرتا ہے جبکہ افغانستان میں مصالحت کی کوششوں کی حمایت کرتا ہے چین اپنے ڈپلومیٹک ایجنڈا میں پاکستان کو ترجیح دیتا ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں